لیڈی ہیلتھ سپروائزر ادویات حاصل کرنے کے لیے رُل گئیں، 

چکوال(علی خان سے) نیشنل پروگرام برائے خاندانی منصوبہ بندی و بنیادی صحت چکوال کی سینکڑوں لیڈی ہیلتھ ورکرز کے پاس ادویات کا سٹاک تقریباًختم، لیڈی ہیلتھ سپروائزر ادویات حاصل کرنے کے لیے رُل گئیں، تفصیلات کے مطابق مذکورہ پروگرام کی ادویات جو لاہور سے چکوال میں پروگرام کے آفس ڈی پی آئی یو میں سٹور کی جاتی ہیں کی چابی اکاؤنٹ سپروائزرنیئر سلطانہ کے پاس ہے جو یہ چارج اور چابی کسی کے حوالے کرنے پر رضا مند نہیں ہیں۔ جس کی وجہ سے ضلع بھر میں موجود1107لیڈی ہیلتھ ورکرز کے پاس ادویات کا سٹاک تقریباً ختم ہو گیا ہے اور وہ کمیونٹی میں ادویات فراہم کرنے کے قابل نہیں رہیں۔ ضلع کی چھیالیس لیڈی ہیلتھ سپروائزرز پروگرام کے دفتر کمپلیکس چکوال میں چکر لگا لگا کر عاجز آ چکی ہیں ان ایل ایچ ایس کی یونین عہدیداران نے منگل کے روز ڈی سی او چکوال محمود جاوید بھٹی کو بھی اس بارے آگاہ کیا جنہوں نے ای ڈی او ہیلتھ کو فوری طور پر ادویات کا معاملہ حل کرنے کی ہدایت کی ان ادویات کا سٹور بند ہونے کی وجہ سے آنے والی تمام ادویات نرسنگ سکول کے ایک کمرے میں اتاری جاتی ہیں۔ واضح رہے کہ اکاؤنٹ سپروائزر نیئر سلطانہ کا تبادلہ تقریباً دو ماہ قبل لاہور ہو چکا ہے اور انہوں نے وہاں جوائننگ بھی کر لی ہے اس بابت ای ڈی او ہیلتھ چکوال انہیں دو تین لیٹر بھی لکھ چکے ہیں تاہم وہ ادویات کا چارج اور سٹور کی چابی تاحال محکمے کے کسی ملازم کے حوالے نہیں کر سکیں، جس سے ادویات کی ترسیل و رسد میں مشکلات پیش آ رہی ہیں اور یہ بحران شدت اختیار کر سکتا ہے ادھر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ نیشنل پروگرام برائے خاندانی منصوبہ بندی اور بنیادی صحت کو ملنے والی ادویات میں بھی بڑے پیمانے پر خرد برد ہوتی رہتی ہے اور مبینہ طور پر پروگرام کے نام سے پرنٹ شدہ ہوتی ہیں اور فروخت کے لیے ممنوع بھی ہیں کو کھول کر بھی اوپن مارکیٹ میں فروخت کر دیا جاتا ہے اس فعل میں ملوث افراد کا محاسبہ بھی ضروری ہے۔

It's only fair to share...Share on Facebook0Share on Google+0Tweet about this on TwitterShare on LinkedIn0

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

WordPress SEO fine-tune by Meta SEO Pack from Poradnik Webmastera